23

میں کسی کی جوتیاں اٹھانے والا نہیں، چوہدری نثارعلی

اسلام آباد: سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ ساری زندگی مسلم لیگ (ن) اور نوازشریف کا سیاسی بوجھ اٹھایا لیکن میں کسی کی جوتیاں اٹھانے والا نہیں۔
اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیرداخلہ اور مسلم لیگ(ن) کے رہنما چوہدری نثار نے کہا کہ جب نواز شریف کی نااہلی ہوئی تو ناراض ارکان کا ایک طوفان تھا، چاہتا تھا تو آرام سے 40، 45 ارکان اسمبلی کا گروپ بنا سکتا تھا، دھڑے بندی کیلئے میرے پاس بے شمار ارکان اسمبلی آئے لیکن میں نے سب کو پارٹی میں رہنے کا مشورہ دیا، آپ کو گالیاں دینے والے آج وفادار ہیں، لیکن ساری عمر ساتھ دینے والا اختلاف کرنے پر برا ہے۔
چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ نواز شریف اور ان کے پیادوں کو کہتا ہوں کہ 34 سال پارٹی کی خدمت کی ہے، پرانے ساتھیوں کو ساتھ لے کر چلنا ہے یا خوشامدیوں کو، نواز شریف سچ سنیں خوشامدیوں کے جھرمٹ میں فیصلہ نہ کریں، میں کسی کی جوتیاں اٹھانا والا نہیں، ساری زندگی کسی کی جوتیاں سیدھی نہیں کیں، مسلم لیگ (ن) کے موجودہ 70 فیصد سے زیادہ رہنماو¿ں نے پارٹی چھوڑی اور پھر جوائن کی، نواز شریف کہتے ہیں پہلے نہیں تھے اب نظریاتی ہوگئے ہیں ان کے بیان پر افسوس ہوا، نواز شریف واضح کریں کہ ان کا نظریہ کیا ہے، کہیں وہ محمود اچکزئی کا نظریہ تو نہیں۔

سابق وزیر داخلہ نے کہا کہ پاکستان پر اس وقت مشکل ترین حالات ہیں، گھیرا تنگ ہورہا ہے، خوفناک صورتحال بن رہی ہے، عمران خان اور پی ٹی آئی کا شکریہ، بڑی بات ہے کہ ایک پارٹی کے لیڈران مجھے شمولیت کی دعوت دے رہے ہیں، خلائی مخلوق کے بیانات پر افسوس ہے کیونکہ ہم حکومت میں ہیں، الیکشن ضرور لڑوں گا، میرے ساتھ میاں صاحب اور ان کی بیٹی طعنہ زنی میں مصروف رہے، کبھی شعر کے ذریعے اور کبھی کسی بیانات کے ذریعے، وہ ساری زندگی اپنا ساتھ دینے والے کی کردار کشی کرا رہے ہیں، پارٹی چھوڑی ہے نہ چھوڑنے کا ارادہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں