نیب ریفرنسز: نواز، مریم کو حاضری سے4دن کا استثنیٰ‘ خواجہ حارث دوبارہ قانونی ٹیم میں شامل

0
24

اسلام آباد: احتساب عدالت میں شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ، العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنسز کی سماعت کے دوران نواز شریف اور مریم نواز کو حاضری سے 4 دن کا استثنی مل گیا۔
واضح رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف اپنی صاحبزادی مریم نواز کے ہمراہ، کینسر کے مرض میں مبتلا اپنی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کی عیادت کے لیے لندن میں موجود ہیں، جو وینٹی لیٹر پر ہیں اور ان کی حالت تشویش ناک ہے۔قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے نواز شریف اور ان کے اہلِ خانہ کے خلاف دائر ریفرنسز میں ملزمان کے وکیل خواجہ حارث نے دوبارہ وکالت کرنے کیلئے درخواست دائر کردی۔
وفاقی دارالحکومت کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نیب کی جانب سے دائر ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کی۔سماعت سے قبل جب خواجہ حارث جب عدالت پہنچے تو جج محمد بشیر اور نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے انہیں خوش آمدید کہا گیا۔سماعت کے آغاز میں خواجہ حارث نے عدالت میں درخواست جمع کرائی اور استدعا کی کہ ان کی وکالت چھوڑنے کی درخواست کو منظور نہ کیا جائے کیونکہ وہ دوبارہ اس کیس کی وکالت کرنے کے لیے تیار ہیں۔
خواجہ حارث کی جانب سے جمع کرائی گئی درخواست میں سپریم کورٹ کے 10 جون کے حکم نامے پر تحفظات کا اظہار کیا گیا جس عدالتِ عظمیٰ نے احتساب عدالت کو نیب ریفرنسز 4 ہفتوں میں نمٹانے اور اس کیس کی سماعت روزانہ کی بنیاد (بشمول ہفتہ اور اتوار) پر کرنے کی ہدایت دی تھی۔
خواجہ حارث نے درخواست جمع کرائی جس میں استدعا کی گئی کہ سابق وزیرِاعظم نواز شریف کی اہلیہ کی طبیعت ناساز ہے جس کی وجہ سے وہ لندن میں ہی کچھ روز قیام کریں گے اور اسی لیے انہیں اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو 7 روز کے لیے عدالت میں حاضری سے استثنیٰ دیا جائے۔احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نواز شریف اور مریم نواز کی حاضری سے 7 روز کیلئے استثنیٰ کی درخواست اعتراض لگائے بغیر منظور کرلی، نواز شریف اور مریم نواز اب 25 جون کو عدالت میں پیش ہوں گے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here