اہم خبریںپاکستان

پیپلز پارٹی نے انتخابی منشور کا اعلان کردیا

اسلام آباد:پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زر داری نے اپنے سیاسی کیریئر کا پہلا انتخابی منشور پیش کر تے ہوئے کہاہے کہ پاکستان کے ہر شعبے میں چاہے قانون نافذ کرنے والے ادارے ہوں یا انصاف کا نظام،ہر طرف استحصال ہی استحصال ہے، ہم خود انحصاری کی پالیسی اپنائیں گے۔

پاکستان میں پانی کا مسئلہ سنگین ہے، پانی کے مسلے کو حل نہ کیا تو سنگین صورتحال اختیار کر جائےگا،ملک بھر میں ڈیمز بنائینگے ، ملک کو دنیا بھر میں جائز مقام لائینگے،اداروں میں آہنگی اور ان کی کارکردگی بہتر بنانے کے ساتھ تعلیم و صحت پر خصوصی توجہ دی جائیگی،جمہوریت کی جڑیں گہری کرنا پارٹی کے منشور کا حصہ ہے،سالہا سال سے پارلیمنٹ میں غیرحاضر رہ کر ووٹ کو عزت نہیں دی جا سکتی،احتساب کے نام پر تمام ادارے تباہ کر دیے گئے۔

پارلیمنٹ خاموش تماشائی بن کر ریاست و معیشت کو لاحق خطرات کو دیکھتی رہی، ہم ریاستی اداروں کے درمیان ہم آہنگی کو فروغ دیں گے اور پارلیمنٹ اور دیگر ادارہ جاتی ڈھانچوں کو مضبوط بنائیں گے ،ملک کے وقار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرینگے، دنیا کے ساتھ برابری کی سطح پر تعلقات رکھیں گے، پارلیمان کو خارجہ پالیسی پر اعتماد میں رکھیں گے، طلباءیونین اور ٹریڈ یونین پر پابندی ختم کی جائیں گی۔

منشور میں پہلی مرتبہ لونگ ویج کا پیکج متعارف کرایا ہے جس کے تحت کسی کو ہاتھ پھیلانے کی ضرورت نہیں رہے گی،کسانوں کی رجسٹریشن کر کے بے نظیر کسان کارڈ جاری کریں گے ، قومی پیداوار میں اضافے کے لیے مقامی کاشتکاروں کو سبسڈی دی جائے گی،ٹیکسٹائل کے شعبے کو بحال کریں گے اور ٹیکسٹائل پر زیرو ٹیکس ہو گا ،اقتدار میں آ کر صحت کی سہولتوں کے نظام کو ملک بھر میں پھیلائیں گے اور پہلی مرتبہ فیملی ہیلتھ پروگرام شروع کیا جائے گا ،پیپلزپارٹی کو سینسر اور ملاوٹ شدہ جمہوریت قبول نہیں ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close