پاکستان

لاہور ہائیکورٹ نے شاہد خاقان عباسی کی تاحیات نااہلی کا فیصلہ کالعدم قرار دےدیا

نواز شریف نے پیشیاں بھگتیں اور عدالتوں کا احترام کرتے ہیں ، انکی اہلیہ بیمار ہیں جیسے ہی ٹھیک ہوں گی وہ واپس آئیں گے‘میڈیا سے گفتگو

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما و سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی این اے 57 مری سے تاحیات نااہلی کا ایپلٹ ٹریبونل کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا۔سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو ایپلٹ ٹریبونل نے اثاثے چھپانے کے الزام میں ان کے آبائی حلقے این اے 57مری سے الیکشن لڑنے کے لیے تاحیات نااہل قرار دیا تھا جسے انہوں نے لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا تھا۔

گزشتہ روز لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مظاہر اکبر نقوی کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے شاہد خاقان عباسی کی اپیل پر سماعت کی جس سلسلے میں سابق وزیراعظم عدالت میں پیش ہوئے۔اعتراض کنندہ کے وکیل مسعود عباسی ایڈووکیٹ کی جانب سے موقف اختیارکیا گیا کہ شاہد خاقان عباسی نے ہائیکورٹ میں اپنے اثاثوں کی تفصیلات کاغذات نامزدگی کے برعکس جمع کروائیں، شاہد خاقان عباسی نے ہائی کورٹ میں جمع کروائی گئی دستاویز میں اسلام آباد کے گھر کی مالیت 20 کروڑ روپے ظاہر کی جبکہ کاغذات نامزدگی میں انہوں نے اسی گھر کی مالیت 3لاکھ روپے ظاہر کی تھی، شاہد خاقان عباسی نے کاغذات نامزدگی میں ائیر بلیو کی مالیت 6 کروڑ روپے ظاہر کی تھی جبکہ انہوں نے ان ہی کاغذات نامزدگی میں ایڈشنل کاغذ لگا کر اس کی مالیت 90کروڑ ظاہر کی، انہوں نے آبائی گھر کی مالیت پہلے ایک لاکھ روپے بتائی جو اب 20کروڑ ہوگئی ہے، مری میں قائم ہوٹل کی مالیت کاغذات نامزدگی میں 10لاکھ جبکہ ہائیکورٹ میں جمع کرائی گئی دستاویزات میں 20کروڑ ظاہر کی ہے۔

وکیل شاہد خاقان عباسی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ایئر بلیو کے کل شیئرز 9کروڑ ہیں جن میں سے شاہد خاکان عباسی کے ملکیتی شیئرز 6 کروڑ ہیں، جس پر عدا؛لت نے ریمارکس دیئے کہ اس میں ان سفیر کے شیئرز بھی ہیں جو ابھی امریکہ میں تعینات ہوئے ہیں اور نیب ان کی تلاش میں ہے ۔ عدالت عالیہ نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد الیکشن ایپلیٹ ٹریبونل کی جانب سے شاہد خاقان عباسی کی تاحیات نااہلی کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا ہے۔عدالتی فیصلے کے بعد لاہور ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ادارے اپنے آئینی کردار میں رہیں، دعا ہے کہ ملک کی بہتری کے لیے الیکشن متنازع نہ ہوں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close