بین الاقوامی

جاپان میں تپتے سورج اور حبس کے باعث 30 افراد ہلاک

ہیٹ ویو کی وجہ سے دارالحکومت میں تین ہزار سے زائد ایمبولینس کی خدمات حاصل کی گئیں جس سے متاثرہ افراد کی تعداد کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے

ٹوکیو: جاپان میں تپتے سورج اور حبس کے باعث کم از کم 30 افراد ہلاک ہو گئے ہیں اور زیادہ تر ہلاکتیں لو لگنے کی وجہ سے ہوئی ہیں۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق جاپان میں شدید گرمی کے باعث ہلاکتوں کی تعداد 30 تک جا پہنچی ہے، جب کہ صرف دو دنوں میں ہیٹ اسٹروک سے متاثر ہونے والے 5 ہزار سے زائد افراد کو مختلف اسپتالوں میں طبی امداد دی گئی ہے۔ گزشتہ روز ہیٹ ویو کی وجہ سے دارالحکومت میں تین ہزار سے زائد ایمبولینس کی خدمات حاصل کی گئیں جس سے متاثرہ افراد کی تعداد کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

جاپان میں رواں ماہ کے آغاز سے ہی سورج اپنے جوبن پر ہے۔ صرف دو ہفتوں کے درمیان شدید گرمی سے 12 ہزار افراد متاثر ہوئے ہیں جن میں زیادہ تر عمر رسیدہ افراد شامل ہیں جب کہ آج بھی درجہ حرارت چالیس سینٹی گریڈ سے تجاوز کر گیا ہے جس کی وجہ سے معمولات زندگی معطل ہیں اور مصروف ترین شاہراہوں پر بھی سناٹا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق گرمی کی تازہ لہر مزید 4 دن تک جاری رہے گی جس سے بچاو کے لیے وزارت صحت نے آگاہی مہم کا آغاز کر رکھا ہے جب کہ جگہ جگہ ریلیف کیمپ قائم کیے گئے ہیں۔ ہیٹ ویو سے قبل جاپان کو زلزلے کا سامنا تھا جس میں 200 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close