بین الاقوامی

برازیل: 200 سال قدیم عجائب گھر میں آتشزدگی، قیمتی نوادرات خاکستر

ریوڈی جنیرو: برازیل کے اہم شہر ریو ڈی جنیرو میں 200 سال پرانے قومی عجائب گھر میں آتشزدگی سے سیکڑوں سالہ پرانا سامان اور قیمتی نوادرات خاکستر ہوگئے۔فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق ریوڈی جنیرو کے شمال میں ماراکانہ فٹبال اسٹیڈیم کے قریب واقع عجائب گھر میں صبح اچانک آگ بھڑک اٹھی، جس پر قابو پانے کے لیے کوششیں کی گئیں۔فائربریگیڈ کی 20 سے زائد گاڑیاں آگ بجھانے میں مصروف رہی اور انہوں نے کافی حد تک اس پر قابو پالیا ہے، تاہم مکمل قابو پانے کی کوششیں جاری ہیں۔
ریو ڈی جنیرو کے فائر ڈپارٹمنٹ کے ترجمان نے اے ایف پی کو بتایا کہ عجائب گھر میں بہت سے آتشگیر سامان موجود ہے اور 2 کروڑ سے زائد ایسے نوادرات ہیں جن کے جلنے کا امکان ہے، تاہم آتشزدگی کے واقعے میں کوئی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ہے۔اس افسوسناک واقعے پر برازیل کے صدر مائیکل ٹیمر کا کہنا تھا کہ آج برازیلین عوام کے لیے افسوس ناک دن ہے کیونکہ انہوں نے 200 سالہ کام، تحقیقات اور معلومات کھو دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قومی عجائب گھر کے مختلف مواد کا اندازاہ نہیں لگایا جاسکتا کیونکہ اس میں گریگو- رومن اور مصر کے وقت کے آرٹ اور ارٹی فیکس کا مجموعہ بھی تھا۔
انہوں نے بتایا کہ اس کے علاوہ اس میں برازیلین سرحد سے ملنے والے قدیم ترین انسانی فوسل بھی تھے جبکہ یہاں پر میناس گیراس ریجن میں پائے جانے والے ڈائیناسور کے ڈھانچے بھی موجود تھے۔برازیلین صدر نے بتایا کہ قومی عجائب گھر میں 1500 صدی میں پرتگالیوں کی امد سے 1889 تک پہلی مرتبہ برازیلین جمہوریت کے اعلان کے وقت تک کی تقریباً 4 صدی پرانا سامان بھی موجود ہیں۔ادھر ڈپٹی ڈائریکٹرقومی عجائب گھر لوئز فرنانڈو دیاس کا کہنا تھا کہ یہ عجائب گھر پرتگال کے شاہی خاندادن کی سرکاری رہائش گاہ ہوتا تھا اور کئی سالوں سے مختلف حکومتوں کی جانب سے مناسب طریقوں سے وسائل کو محفوظ بنانے کے لیے اس کا استعمال کیا جاتا تو جو آج تباہ ہوگیا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close