اہم خبریںپاکستان

عارف علوی پاکستان کے تیرہویں صدر منتخب

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے ڈاکٹر عارف علوی پاکستان کے 13ویں صدر منتخب ہوگئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق صدارتی انتخاب کے لیے قومی اسمبلی اور سینیٹ میں مجموعی طور پر 430 ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے، پی ٹی آئی کے عارف علوی نے 212 ، اپوزیشن جماعتوں کے امیدوار مولانا فضل الرحمان نے 131 جبکہ پیپلز پارٹی کے اعتزاز احسن نے 81 ووٹ حاصل کئے۔سندھ اسمبلی میں 163 میں سے 158 ارکان نے ووٹ ڈالے، پیپلز پارٹی کے اعتزازاحسن کو 39، عارف علوی کو 22 جب کہ مولانا فضل الرحمان کوایک الیکٹورل ووٹ پڑا۔
بلوچستان اسمبلی میں 61میں سے60 ارکان نے صدارتی انتخاب میں ووٹ ڈالے، عارف علوی نے 45 جب کہ مولانا فضل الرحمان کو 15 الیکٹورل ووٹ ملے، اعتزاز احسن ایک بھی ووٹ حاصل نہیں کرپائے۔خیبر پختونخوا اسمبلی کے تمام 112 ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے، صوبائی اسمبلی میں تحریک انصاف کو اکثریت حاصل ہے، جس کی وجہ سے عارف علوی کو 78، مولانا فضل الرحمان کو 26 اور اعتزاز احسن کو 5 ارکان نے ووٹ دیا۔ خیبر پختونخوا اسمبلی سے عارف علوی کو 41 ، مولانا فضل الرحمان کو 14 جب کہ اعتزاز احسن کو 3 الیکٹورل ووٹ ملے۔
پنجاب اسمبلی میں 354 میں سے 351 ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے، جن میں 18 ووٹ مسترد ہوئے۔ عارف علوی کو 33، مولانا فضل الرحمان کو 25 جب کہ اعتزاز احسن کو ایک الیکٹورل ووٹ ملا۔اس سے قبل صدارتی انتخاب کے لیے سینیٹ اور قومی و صوبائی اسمبلیوں میں بیک وقت پولنگ ہوئی، تحریک انصاف نے عارف علوی، پیپلز پارٹی نے اعتزاز احسن جب کہ مسلم لیگ (ن) سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں نے مولانا فضل الرحمان کو میدان میں اتارا تھا۔صدارتی انتخاب کے لیے چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) سردار محمد رضا ریٹرننگ آفیسر جب کہ چاروں صوبائی اسمبلیوں میں ہائی کورٹس کے چیف جسٹس صاحبان اور سینیٹ و قومی اسمبلی میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے پریزائیڈنگ آفیسر کی ذمہ داریاں سر انجام دیں۔ پولنگ کا عمل صبح 10 بجے شروع ہوا اور شام 4 بجے تک بلا تعطل جاری رہا۔
صدارتی انتخاب کے لیے چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) سردار محمد رضا ریٹرنگ آفیسر ہیں جو حتمی نتیجے کا اعلان کریں گے۔ ترجمان الیکشن کمیشن کے مطابق الیکشن کمیشن حتمی نتیجے کا اعلان آج کرے گا۔بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نو منتخب صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ میں صرف تحریک انصاف کا نہیں بلکہ پوری قوم کا صدر ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں عمران خان کا مشکور ہوں کہ انہوں نے اس بڑی ذمہ داری کے لیے مجھے منتخب کیا، صدر بننے میں میرا کوئی کمال نہیں بلکہ صدارت کا سہرا میرے ساتھی اور کارکنان کے سر ہے جو طویل عرصے سے جدوجہد کررہے تھے۔
ایک سوال کے جواب میں نومنتخب صدر نے کہا کہ حلف برداری کی تقریب میں حزب اختلاف کی جماعتوں کو مدعو کیا جائے گا، صدر کی حیثیت سے جائز سیکورٹی لوں گا لیکن پروٹوکول کم لوں گا۔علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان ،چاروں صوبوں کے وزراءاعلیٰ ،گورنرز اور وزیر اطلاعات فواد چودھری نے عارف علوی کو صدر پاکستان منتخب ہونے پر مبارکباد پیش کیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close