اہم خبریںپاکستان

امریکی وزیر خارجہ کی سیاسی و عسکری قیادت سے ملاقات ،پاک امریکہ تعطل ختم، تعلقات ری سیٹ کر نے پر اتفاق

اسلام آباد: امریکہ نے افغانستان کا مسئلہ مذاکرات کے ذریعے حل کر نے کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان سے مدد مانگ لی ہے جس پر پاکستان نے کہا ہے کہ افغانستان کا کوئی فوجی حل نہیں،وہ افغانستان میں امن کے قیام کےلئے کر دارادا کر نے کےلئے تیار ہے جبکہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ پاک امریکا تعلقات میں جمی برف پگھل گئی،دوطرفہ تعلقات ری سیٹ کر نے پر اتفاق ہوا ہے، ایک دوسرے کو سمجھنے کےلئے مذاکرات کا اگلا راﺅنڈ امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں ہوگا ،امریکی وزیر خارجہ سے ملاقات میں سیاسی و عسکری قیادت موجودگی واضح پیغام ہے کہ ہم سب ا یک ہیں ، ڈومور کا مطالبہ نہیں ہوا، میں نے واضح کیا اگر تعلق آگے بڑھانا ہے تو بنیاد سچائی پر ہونی چاہیے، ہمیں ایک دوسرے کو سننا ہو گا، جب تک ایک دوسرے کے تحفظات سامنے نہیں رکھیں گے، پیش رفت نہیں ہوپائے گی ،پہلا دورہ افغانستان کا کرونگا ۔
پومپیو کے ساتھ 300 ملین ڈالرز روکنے پر بات نہیں ہوئی ، امریکہ ہمارا رشتہ لینے دینے کا نہیں ہے ہم خودار قوم ہیں ،پاکستان کا مفاد سب کو عزیز اور مقدم ہے، پر امید ہوں، پاک امریکہ تعلقات کامیابی کے ساتھ جاری رہیں گے ،ایل اوسی پر سیز فائر کی خلاف ورزی سے کس کو فائدہ ہورہاہے ؟ہم نے امریکہ کو اپنی تشویش اور توقعات سے آگاہ کیا ہے، اگرمشرقی سرحد پرچھیڑچھاڑ جاری رہے گی توہماری توجہ بٹی رہے گی۔بدھ کو وزیراعظم عمران خان سے امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے وزیراعظم ہاو¿س میں ملاقات کی جس میں میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی سمیت دیگر حکام بھی موجود تھے جبکہ امریکی وزیر خارجہ کے ہمراہ جنرل جوزف ڈنفورڈ اور افغانستان کےلئے امریکا کے خصوصی مشیر زلمے خلیل زادہ ملاقات میں موجود تھے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close