پاکستان

غریب آدمی کو بچانا ہے، امیر آدمی کو اپنے حصے کاشیئردینا پڑےگا :چوہدری فواد حسین

اسلام آباد :وفاقی کابینہ نے افغان مہاجرین بارے میں جامع پالیسی بنانے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہاہے کہ اس وقت آٹھ لاکھ اناسی ہزار ایک سواناسی افغانیوں کے پاس افغانستان سے جاری کردہ سٹیزن کارڈ ہیں  تیرہ لاکھ چورانوے ہزارافغانیوں کے پاس ریفیوجی کارڈ ہیں، پانچ لاکھ افغانی بغیر دستاویزات کے پاکستان میں موجود ہیں جن افغانیوں کے پاس دستاویزات ہیں ان کو انٹرنیشنل کنونشن کے مطابق سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں جبکہ وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین نے کہاہے کہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان تین اہم معاہدے طے پا گئے ہیں،اتوار کو سعودی عرب کا اعلیٰ ترین وفد پاکستان آئےگا ، 100 بڑے ڈیفالٹر کے خلاف ایف بی آر ایک بڑاآپریشن شروع کررہاہے،اسلام آباد میں سات ہزار کنال اراضی واگزار کرائی ہے، اب آپریشن کراچی میں کیاجائےگا ، ریلوے اور کے پی ٹی کی زمینوں پرقبضے چھڑائے جائیں گے ،معلومات کی رسائی جمہوریت کاحصہ ہے خیبرپختونخوا کاقانون مضبوط اوروفاق کاقانون کمزور ہے، قانون کو مضبوط بنائیں گے ، غریب آدمی کو بچانا ہے ، امیر آدمی کو اپنے حصے کاشیئردینا پڑےگا ، سفارشی کلچر ہمیشہ کےلئے دفن کررہے ہیں،سیاحت کے فروغ کے لئے ٹاسک فورس بنائی گئی ہے،بہت جلد جامع سیاحت پالیسی لائیں گے۔
جمعرات کو وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد وفاقی وزیرتوانائی عمرایوب خان کے ہمراہ میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیراطلاعات نے کہاکہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان گرانٹس کے تین معاہدے ہوئے ہیں یہ وزیراعظم عمران خان کے دورہ سعودی عرب کا تسلسل ہے ،سعودی ولی عہدمحمد بن سلیمان نے وزیراعظم کے دورے کے دوران اس بات پر زوردیاتھا کہ معاملات تیزی سے آگے بڑھائیں گے،اتوارکو سعودی عرب کااعلیٰ ترین بڑا وفد پاکستان آئے گا جس میں سعودی عرب کے انویسٹ منٹ بورڈ کے چیئرمین، وزیرپٹرولیم ،وزیرانرجی اوردیگر سرمایہ کار شامل ہوں گے ،سعودی عرب سی پیک اور انفراسٹرکچر کے منصوبوں میں بڑی انویسٹ منٹ لارہا ہے وزیراطلاعات نے کہاکہ وفاقی کابینہ نے افغان مہاجرین کے بارے میں ایک جامع پالیسی بنانے کافیصلہ کیا ہے اس وقت آٹھ لاکھ اناسی ہزار ایک سواناسی افغانیوں کے پاس افغانستان سے جاری کردہ سٹیزن کارڈ ہیں جبکہ تیرہ لاکھ چورانوے ہزارافغانیوں کے پاس ریفیوجی کارڈ ہیں اور پانچ لاکھ افغانی بغیر دستاویزات کے پاکستان میں موجود ہیں ۔
انہوں نے کہاکہ جن افغانیوں کے پاس دستاویزات ہیں ان کو انٹرنیشنل کنونشن کے مطابق سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سٹیٹ بنک کے منصور حسین صدیقی کو ڈی جی فنانشل مانیٹرنگ تعینات کیاگیا ہے جبکہ عبدالرﺅف کو ویج بورڈ کا چیئرمین بنایاگیا ہے، 100 بڑے ڈیفالٹر کے خلاف ایف بی آر ایک بڑاآپریشن شروع کررہاہے ہم نے اسلام آباد میں سات ہزار کنال اراضی واگزار کرائی ہے اب یہ آپریشن کراچی میں کیاجائے گا وہاں پر ریلوے اور کے پی ٹی کی زمینوں پرقبضے چھڑائے جائیں گے ،ہم کراچی کو ترقی کی شاہراہ پر گامزن کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ کو وفاقی سطح پرمضبوط کرنے کی ضرورت ہے ،معلومات کی رسائی جمہوریت کاحصہ ہے خیبرپختونخوا کاقانون مضبوط ہے لیکن وفاق کاقانون کمزور ہے ،ہم قانون کو مضبوط بنائیں گے ۔
وزیراطلاعات نے کہاکہ فاٹا اورپاٹا میں ایک مخصوص نظام چل رہے تھے وہاں پر ٹیکس کے لئے پانچ سال کی چھوٹ دی گئی ہے جون2023ءتک نان کسٹم پیڈ گاڑیاں وہاں پراستعمال ہوسکیں گی اور وہاں پرپانچ سال تک سیلز ٹیکس، انکم ٹیکس اور وودہولڈنگ ٹیکس کی چھوٹ دی گئی ہے انہوں نے کہاکہ ہم نے غریب آدمی کو بچانا ہے جبکہ امیر آدمی کو اپنے حصے کاشیئردینا پڑے گا ۔انہوں نے کہاکہ وزیراعظم نے ہدایت کی ہے کہ کسی کو سفارش پربھرتی نہ کریں اور کسی دوسرے محکموں میں بھی ہرگزسفارش نہ کریں ہم سفارش کے کلچر کو ہمیشہ کے لئے دفن کررہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ تجاوزات کےخلاف آپریشن کے موقع پر بہت سی سفارشیں آتی ہیں،وزیراعظم نے ہدایت کی ہے کہ کوئی بھی سفارش نہ مانی جائے ۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close